یوم آزادی مبارک


کیسے کہیں آزادی مبارک ہو سمجھ میں نہیں آتا
معصوم بیٹی کی عزت روز پامال ہوتی ہے

کیوں نہیں درندوں کا قانون بنا آج تک
جبکہ ہر گھر میں کویؑ نہ کویؑ بیٹی ضرور ہوتی ہے

بیٹیوں کو دفن کر دینے والے لوگ پاگل نہیں تھے
پوچھو اس کے دل سے جس کی عزت نیلام ہوتی ہے

کون جواب دے گا سچ کا سامنا کون کرے گا
کویؑ ذمہ دار نہیں کہ سب کی نیت خراب ہوتی ہے

تب ان پڑھ تھے اور اب پڑھے لکھے جاہل ہیں
جاہلو سنو بیٹی کسی کی بھی ہو وہ بیٹی ہوتی ہے

 

YOM E AZAADI MUBARAK HO

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: