Think Abut Its, Please


السلام علیکم ورحمت الله وبرکاته

دوستو رمضان کریم بھی بس اب ہم سے جدا ہو رہا ہے اب پھر ابلیس خبیث بھی آزاد ہو جاےؑ گا
اور اپنے کام میں لگ جاےؑ گا امید ہے کہ جن لوگوں پر اللہ پاک نے اس رمضان کریم میں اپنی
خاص رحمتیں بر سایؑ ہیں وہ اس خبیث کی خباثتوں سے محفوظ رہیں گے اور کیؑ مجھ جیسوں
کو محفوظ رکھنے میں اپنا کردار بھی ادا کریں گے ان شا اللہ
میں ایک الجھن میں عرصہ دراز سے مبتلا ہوں آج اس کو بھی یہاں لکھ رہا ہوں اس امید پر کہ شاید
کسی طرح میں اس فکر سے آزاد ہو سکوں تو عرض داشت کو بہت آسان سے لفظوں میں بیان
کرنے کی کوشش کرتا ہوں کہ
جب بھی مجھے کچھ نبی پاک محمد رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کی ازواج مطہرات
رضی اللہ تعالیٰ عنہا اور بی بی پاک فاطمۃ الزھراء سلام اللہ علیہا کے بارے میں لوگوں کو
واقعات یہاں نقل کرتے دیکھتا ہوں تو ایک عجیب سی کیفیّت سے دو چار ہو جاتا ہوں اور مجھے
یہ خیال بار بار آتا ہے کہ کیا یہ لکھنے والے موصوف کی بیٹی یا اس کے بیوی جو بہت پاک دامن بھی
ہو تو میں اس کے بارے مین لکھوں تو اس کو کیسا لگے گا؟
جناب یقین کریں کہ مجھ سمیت سب کو اپنی بیٹی اور بیوی کی بات کسی بھی طریقے سے لکھی
گیؑ ہو بلکل بھی اچھی نہیں لگے گی تو ہم لکھنے سے پہلے یہ کیوں بھول جاتے ہیں کہ یہ سب
ہمارے نبی پاک محمد رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کو کیسے اچھی لگ سکتی ہے اور یہ ہم
سب مسلم خوب جانتے ہیں کہ جو چیز بھی ،
اللہ پاک کے محبوب پاک محمد رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم “
کو ناگوار گزر گیؑ وہ اللہ پاک کو کبھی کسی قیمت پر بھی قبول و منظور نہیں ہو سکتی ۔
اس کے سمجھنے سے میں قاصر ہوں کہ لوگ اپنی بیٹی اور بیوی کو ہر حال میں باعزت اور محفوظ
رکھنا اپنا فرض عین سمجھتے ہیں اور اللہ پاک کے محبوب محمد رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم
کی بیٹی پاک فاطمۃ الزھراء سلام اللہ علیہا اور ازواج مطہرات رضی اللہ تعالیٰ عنہا کے واقعات بہت بڑھ چڑھ کر لکھ رہے ہوتے ہیں جن میں بے حرمتی کو دیکھا یا محسوس بھی نہیں کیا جا رہا ہوتا ہے
زرا سا بھی اس طرف خیال نہیں کرتے کہ یہ چیز ان کو سیدھا جہم واصل
کرنے کے کافی ہے اس کا کچھ پوچھا بھی نہیں جاےؑ گا کہ تم دنیا مین گےؑ تھے وغیرہ
پلیز میری اس پوسٹ کے حوالے سے تمام عالم اسلام کو عاجزانہ درخواست ہے کہ اس چیز سے نکل جایؑں
یہ ایک کھلی بے غیرتی ہے یہ کس نے شروع کی میں کچھ نہیں جانتا لیکن مجھے اتنا ہی سمجھ میں آ رہا
ہے جو یہاں بیان کر چکا ہوں اور میں اپنی ماں ، بہن ، بیٹی یا بیوی پر لکھا برداشت نہیں کر سکتا تو پھر
جن کا کلمہ شریف ” لا إله إلا الله محمد رسول الله
پڑھتا ہوں ان کے گھر کے بارے میں کچھ بھی کیسے برداشت کر سکتا ہوں ؟

نوٹ :

اگر ایمان اجازت دے تو اس پوسٹ کو ہر مسلم تک پہنچانے کی کوشش کریں کہ شاید اللہ پاک ہدایت
عطا فرمایؑں اور لوگ اس چیز سے نکل سکیں اس چیز سے نکلنا بھی میرے نزدیک جہنم سے نکلنے کے برابر ہے

 

Think Abut Its

 

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

w

Connecting to %s

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: