ہاےؑ یہ پردیس

ہاےؑ یہ پردیس اور تم سے بھی ہوں دور ماں

 

کیسے بتاؤں تم کو یہ سب کتنا ہوں مجبور ماں

 

یہ دوری کر گیؑ ہے مجھے اندر سے کتنا چور ماں 

 

پھر بھی رکھ بھروسہ ان شا اللہ آؤں گا ضرور ماں 

 

 

 

Poetry

 

 

 

2 thoughts on “ہاےؑ یہ پردیس

Leave a Reply