کتنی بار منع کیا تھا

 

 

کتنی بار منع کیا تھا ان کی بریانی کھانے سے

لعنتی بے ضمیرے تالی بجا کے جھومتے ہیں

 

مردے ، گدھے نہ کھانا ہزار بار کہا تھا جنہیں

زندہ بھی مردہ جیسے ہو کے وہ اب گھومتے ہیں

 

Poetry

 

 

Leave a Reply