” الظلم “

کیسی ہے ہماری قسمت اور کیسے ہیں نصیب ہمارے
ایک خبر جگر تک چھلنی کرتی ہے ابھی زخم بھرتے نہیں
ایک اور آ جاتی ہے آج بھی ایک اور خبر چل رہی ہے
ہم آپ سب کی طرح تو اعلیٰ ادبیات نہیں جانتے لیکن آپ
سب تک اپنے احساسات کو پہنچانے کے لےؑ لفظون کا سہارا
لینے کی کوشش کرتے ہیں ، عرض ہے کہ

جھوٹا دوجے جھوٹے کو خوش کر گیا یوں فیصلہ سنا کے

محبت میں پورا تولنے والے کو ہی مجرم ٹھہرا کے

 

Poetry

 

Leave a Reply